32

پندرہ سالہ لڑکے کے پیٹ میںایسا کیا تھا جسے دیکھ کر ڈاکٹر پریشان رہ گئے

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک)ملائیشیا کے شہر کو لا لمپور میں ایک پندرہ سالہ لڑکے کو ہر وقت پیٹ میں درد رہتا تھا ،جس کی شکایت وہ اکثر اپنے والدین سے کرتا تھا ،والدین اس لڑکے کو لے کر کئی ایک دفعہ ہسپتال گئے لیکن ڈاکٹر ز نے پیٹ در د کی دوائی دے کر گھر بھیج دیا ۔

کچھ عرصے بعد جب اس لڑکے کو بہت زیادہ قبض رہنے لگی اور درد شدید ہو گیا تو والدین نے دوبارہ ہسپتال داخل کروایا تو ڈاکٹروں نے الٹر اساﺅنڈ کے ذریعے دیکھا کہ بچے کے پیٹ میں ٹیومر ٹائپ کی کوئی بڑی سی چیز ہے جس کیلئے انہوں نے آپریشن کا فیصلہ کیا ۔

جب لڑکے کا آپریشن کیا گیا تو ڈاکٹر دیکھ کر پریشان رہ گئے کہ وہ کوئی ٹیومر نہیں بلکہ ایک مردہ بچہ تھا جو اس لڑکے کے پیٹ میں کافی عرصے سے موجود تھا ،ڈاکٹر نے تحقیق کے بعد یہ بھی بتایا کہ ہوسکتا ہے کہ اس لڑکے کی پیدائش کے وقت اس کے جرواں بھائی کے سیل اس بچے میں منتقل ہو گئے ہوں اور وہ بعد ازاں اس کے پیٹ میں ہی پرورش پاتا رہا ہو ،لیکن کچھ عرصے بعد وہ زندہ نہ رہا ہو۔

ڈاکٹر وں نے آپریشن کے بعد اس مردہ بچے کو پندرہ سالہ لڑکے کے پیٹ سے نکال دیا جس کے بعد اب وہ لڑکا صحت یاب ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں